हम देखेंगे

We Shall See

Inevitable that we shall see
Dawn of the promised day,
When pinnacles of tyranny
Will come to be blown away
Like bales of cotton loosely held,
When the ground shall shudder underneath
The gumption of empowered feet,
And bang on the swollen head
Lightning strike with telling heat;
When despot- icons shall be removed
From God’s outraged earthly bed,
And taintless victims of crushing faith
Be seated on the regal spread;
When crowns shall be flung away
And thrones brought low from high,
That promised day we shall know,
We shall know, we shall see.
Only Allah’s name shall be,
Who is both manifest and concealed,
Both hidden and revealed;
When the proclamation “I am the Truth”
Shall be made by one and all
When “we the people” shall come to rule,
A rule that embraces one and all
Such a day we indeed shall see,
That belongs to one and all.

(Badri Raina's transcreation of Hum Dekhenge)

 

ہم دیکھیں گے

لازم ہے کہ ہم بھی دیکھیں گے
وہ دن کہ جس کا وعدہ ہے
جو لوح ازل میں لکھا ہے
جب ظلم و ستم کے کوہ گراں
روئی کی طرح اڑ جائیں گے
ہم محکوموں کے پاؤں تلے
جب دھرتی دھڑ دھڑ دھڑکے گی
اور اہل حکم کے سر اوپر
جب بجلی کڑ کڑ کڑکے گی
جب ارض خدا کے کعبے سے
سب بت اٹھوائے جائیں گے
ہم اہل صفا مردود حرم
مسند پہ بٹھائے جائیں گے
سب تاج اچھالے جائیں گے
سب تخت گرائے جائیں گے
بس نام رہے گا اللہ کا
جو غائب بھی ہے حاضر بھی
جو منظر بھی ہے ناظر بھی
اٹھے گا انا الحق کا نعرہ
جو میں بھی ہوں اور تم بھی ہو
اور راج کرے گی خلق خدا
جو میں بھی ہوں اور تم بھی ہو

 

 

Navu Nodona

 

From South Africa, by Kathyayini Dash

 

हमउं देखब, हम देखबे करब | The Quint

 

Naam Parpome…

 

हम देखेंगे — Where The Mind Is Without Fear